ہزارہ موٹر وے کے خلاف کوکل ،برسین ،چمہڈ اور بانڈہ صاحب خان کے سینکڑوں عوام کا احتجاجی مظاہرہ ،کام بند ا ور روڈ پر روکاوٹیں کھڑی کر کے ر ٹریفک بلاک کر دی ،درجنوں دیہات کو متبادل راستہ نہ ملنے تک احتجاج جاری رکھنے کا اعلان ،پروجیکٹ ڈائریکٹر ظفر محمود کی یقین دھانی پر احتجاج موخر کر دیا گیا ،حکومتی اداروں کی عدم توجہی اور عوامی مشکلات سے چشم پوشی کی وجہ سے ہزارہ بھرمیں جگہ جگہ سی پیک اور ہزارہ موٹر وے منصوبے کے خلاف لوگ احتجاج کرنے پر مجبور ہیں اعلیٰ افسران دفتروں میں بیٹھ کر عوامی ضروریات کو پسِ پشت ڈال کر جو منصوبے بناتے ہیں وہ عوام کی آسانی کم اور مشکلات زیادہ پیدا کرتے ہیں حویلیاں یونیورسٹی کے قریب سے گزرنے والے ہزارہ موٹر وے کی سڑک جہاں سے کوکل برسین سمیت درجنوں دیہات کے لئے رابطہ سڑک بند ہونے سے ہزاروں مقامی افراد کو شدید مشکلات پیش ہونے سے عوام احتجاج پر مجبور ہو چکے ہیں گذشتہ روز مقامی آبادیوں کے سینکڑوں افراد نے اپنے حقوق کے لئے یونیورسٹی روڈ پر دھرنا دے کر شدید احتجاج کیا اور مطالبہ کیا کہ درجنوں دیہات کے لئے جو انڈر پاس بنایا گیا ہے اس پر مقامی افراد نے پہلے دن احتجاج کیا تھا کہ یہاں فلائی اوور بنایا جائے تا کہ ٹریفک کی روانی اور پیدل چلنے والوں کو آسانی ہو لیکن محکمہ کے لوگوں نے عوامی ضرورت کو بالائے طاق رکھ کر انڈر پاس بنایا جو برسات میں پانی سے بھر جاتا ہے اور ٹریفک سمیت پیدل چلنا بھی ناممکن ہو جاتا ہے شدید احتجاج پر منصوبے کے پروجیکٹ ڈائریکٹر ظفر محمود نے مظاہرین سے مذاکرات کئے اور ان کی شکائت اعلیٰ حکام تک پہنچانے کا وعدہ کیا مظاہرین نے کہا کہ اگر ہمارے مطالبات اور عوامی شکایات کا آزالہ نہ کیا گیا تو پھر سے بھرپور احتجاج کیا جائے گا مسائل کے حل کی یقین دہانی پر مظاہرین نے احتجاج موخر کر دیا اس موقع پر تحصیل نائب ناظم حویلیاں عامرشہزاد خان ،ممبر ضلع کونسل بابو جاوید اقبال نے بھی عوامی مطالبات کی حمائت کی

 


We deeply acknowledge your queries and your kind feedback/comments are highly valuable for us.
If you find anything offensive please inform us or send us your feedback at
[havelian.net@gmail.com]
Thankyou very much, please keep visiting the website :)